پنجاب یونیورسٹی لاھور میں پروگیسو سٹوڈنٹس کولیکٹیو 23-2022 کی نئی کابینہ کا اعلان

پنجاب یونیورسٹی میں اس سال پروگریسیو سٹوڈنٹس کولیکٹیو کی نئی کابینہ کا اعلان کر دیا گیا۔ تفصیلات کی مطابق نو منتخب کابینہ عہدیداران میں حارث آزاد بطور صدر ،نائب صدر اجیت پرساد  اور جنرل سیکرٹری نادیہ علی منتخب ہوئی ہیں ۔

سندھی طالب علم کی جبری گمشدگی پر پی ایس سی کراچی اور لواحقین کا احتجاج

مورخہ چھ اگست کو فیڈرل اردو یونیورسٹی کے طالب علم احمد فلپوٹو کو سچل گوٹھ کے علاقے سے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے سول کپڑوں اور پولیس کی وردی میں ملبوث افراد نے جبری طور پر اٹھایا اور نامعلوم جگہ پر لے گئے۔

شہید ذوالفقار علی بھٹو یونیورسٹی میں فیسوں میں اضافے پر طلبہ سراپا احتجاج

انتظامیہ کی جانب سے یکدم فیسوں میں 33 فیصد اضافے کے خلاف شہید ذوالفقار علی بھٹو یونیورسٹی کے طلبہ کی جانب سے مسلسل احتجاج کا سلسلہ جاری ہے۔ بغیر پیشگی اطلاع کے فیسوں میں کیے جانے والے ہوشربا اضافے پر طلبہ نے شدید تشویش کا اظہار کیا۔

بلوچ سٹوڈنٹس آرگنائزیشن کو ہراساں کرنے کی مذمت کرتے ہیں، پروگریسیو سٹوڈنٹس کولیکٹیو

مورخہ تیس اگست کو بلوچستان یونیورسٹی میں بلوچ سٹوڈنٹس آرگنائزیشن نے یونیورسٹی میں کتابوں کی نمائش لگانے کی اجازت مانگی جس پر یونیورسٹی انتظامیہ نے اجازت دینے سے نا صرف انکار کیا بلکہ طلبہ کے ساتھ ناروا سلوک بھی کیا گیا۔ اس آمرانہ رویے کے خلاف جب طلبہ نے سریاب روڈ پر کتابیں رکھ کر احتجاج کیا۔

سامراج کے مفادات پہ مبنی عالمی نظام

عالمی سماجی نظام طبقات میں بٹا ہوا ہے۔عالمی نظام میں کور سٹیٹ اور تیسری دنیا کی ریاستیں ہے اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ نہ تو معاشرے میں برابری ہے اور نہ ہی عالمی سطح پر ریاستوں میں برابری پائی جاتی ہے۔

مہنگائی پر آواز اٹھانا کشمیر کے طلبہ کا جرم بن گیا

جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن کی طرف سے مہنگائی کے خلاف آواز اٹھانے پر کشمیر ونگ کے صدر صمد شکیل اور نائب صدر ادیبہ جمیل ان کی بہن کنول جمیل
سمیت متعدد طلبہ کو گرفتار کر لیا گیا ۔

پنجاب کو درپیش پانی کا سنگین مسئلہ

پنجاب پاکستان کا سب سے بڑا صوبہ اور زرعی اعتبار سے پاکستان کی زرعی اجناس کا گڑھ ہے۔آج پانی کی کمی اور آلودہ پانی کے مسائل سے دوچار ہے۔پنجاب جو کے پانچ دریاؤں کی سرزمین جانا جاتا تھا آج شاید اس نام کی وہ عزت و شہرت کھو بیٹھا ہے۔

لال سلام کامریڈ سنید داوڑ

سنید داوڈ تھا کون؟ ہمارا دوست، کامریڈ سنید داوڑ موجودہ دور کی حسد، جھوٹ، منافقت اور نفرت جیسی لعنتوں سے پاک، لوئر مڈل کلاس سے تعلق رکھنے والا ایک ترقی پسند طالب علم رہنما تھا۔ جس نے یونیورسٹی آف لاہور میں پشتون کونسل کی بنیاد رکھی تا کہ پسے ہوئے طبقات اور علاقے سے آئے پشتونوں کو درپیش مسائل کے حل کے لیے ایک مشترکہ پیلٹ فارم مہیا کیا جا سکے