زکریا یونیورسٹی: بلوچستان اور فاٹا کے طلبہ کے لیے مخصوص کوٹہ اور سکالرشپس ختم

زکریا یونیورسٹی: بلوچستان اور فاٹا کے طلبہ کے لیے مخصوص کوٹہ اور سکالرشپس ختم

رپورٹ: علی رضا

بہاالدین زکریا یونیورسٹی ملتان نے بلوچستان اور فاٹا کے طلبہ کے لیے مخصوص کوٹہ اور سکالرشپس کی سہولت ختم کر دی ہے۔

بہاالدین زکریا یونیورسٹی ملتان نے بلوچستان اور فاٹا کے طلبہ کے لیے ہر ڈیپارٹمنٹ میں 4،4 سیٹیں مخصوص کر رکھی تھیں اور ان طلبہ کو فیس میں بھی رعایت دی جاتی تھی لیکن اس سال وائس چانسلر بہاالدین زکریا یونیورسٹی ملتان ڈاکٹر منظور اکبر کنڈی نے کوٹہ اور سکالرشپس دونوں سہولتیں ختم کرنے کا اعلان کیا ہے جس کے باعث یونیورسٹی کو طلبہ کی جانب سے بھرپور ردعمل کا سامنا ہے۔

طلبہ نے کئی خطوط کے ذریعے وائس چانسلر بہاالدین زکریا یونیورسٹی ملتان ڈاکٹر منظور اکبر کنڈی کو اپنے تحفظات سے آگاہ کیا لیکن کوئی مثبت ردعمل نہ آنے کی کے باعث اب طلبہ سوشل میڈیا پر اس فیصلہ کے خلاف کمپین چلا رہے ہیں۔

اس حوالے سے جب ہم نے بی زیڈ یو سٹوڈنٹس کولیکٹو کے رہنما امجد مہدی سے بات کی تو ان کا کہنا تھا کہ جامعہ کی جانب سے یہ فیصلہ انتہائی افسوس ناک ہے فاٹا اور بلوچستان میں پہلے ہی یونیورسٹیاں نہ ہونے کے سبب تعلیم کی بہت کمی ہے اس لیے وہ اتنی دور ملتان جیسے علاقوں میں آ کر تعلیم حاصل کرتے ہیں لیکن یہ فیصلہ کئی طلبہ کی تعلیم کا راستہ بند کر دے گا اس لیے ہم اس فیصلہ کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔

READ  طلبہ پر تشدد میں ملوث پشاور یونیورسٹی کا چیف سکیورٹی آفیسر معطل

پروگریسو سٹوڈنٹس کولیکٹو کے رہنما رائے علی آفتاب نے سٹوڈنٹس ہیرلڈ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ یونیورسٹی کے اس قدم کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے اور یہ فیصلہ نہ صرف فاٹا اور بلوچستان کے طلبہ کی تعلیم متاثر کرے گا بلکہ یہ فیصلہ صوبائی ہم آہنگی پر بھی منفی اثرات مرتب کرے گا۔ اس لیے ہم حکومت سے اپیل کرتے ہیں کہ اس معاملہ میں مداخلت کر کے بہاالدین زکریا یونیورسٹی ملتان کے طلبہ کے مسائل حل کروائے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *